کورونا سے متاثرہ 90 فیصد مریضوں کا علاج گھر میں ممکن ہے

اسلام آباد(نیوز ٹائم اپڈیٹس) درجہ حرارت اور آکسیجن  لیول کو کنٹرول کرکے وبا پر قابو پانا ممکن ہے گھریلو ٹوٹکے اور شہد کا استمعال فلو اور سردی کم کرنے کے لیے موزوں نسخہ ہے طبی ماہرین

تفصیلات کے مطابق ڈاکٹرز نے بتایا ہے کہ کورونا کی وبا میں مبتلا 90 فیصد مریضوں کا علاج گھر میں ممکن پلازما تھراپی، ایکٹمرا اور ڈیکسا میتھازون وائرس کا مکمل علاج نہیں  جبکہ ثنا مکی کے مضر اثرات بہت زیادہ ہیں انہوں نے کہا ہے کہ سوشل میڈیا پر چلنے والی گمراہ کن معلومات نے سنسنی پھیلائی ہوئی ہے اس پر عمل نہ کریں ماسک کے استعمال سے وائرس کا پھیلاؤ روکا جا سکتا ہے

طبی ماہرین کا کہنا تھا کہ کورونا سے سے ڈرنا نہیں بچنا ہے معمولی علامات والے مریضوں کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے 90 فیصد سے زائد مریض گھر پر ہی مناسب علاج سے تندرست ہو سکتے ہیں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ معمول کے مطابق درجہ حرارت اور آکسیجن لیول چیک کرکے وبا پر کنٹرول ممکن ہے خون میں آکسیجن لیول 93 فیصد سے زیادہ ہو تو بخار کو پیراسیٹامول یا دیگر ادویات سے کم کیا جا سکتا ہے

گھریلو ٹوٹکے اور شہد کا استعمال فلو اور سردی کم کرنے کیلئے موزوں نسخہ ہے ڈاکٹرز نے مشورہ دیا ہے کہ اینٹی بائیوٹکس، اینٹی وائرل اور ہربل علاج سے پرہیز کیا جائے آگاہی پیغام میں کہا گیا ہے کہ اگر آکسیجن لیول 93 یا نارمل ہو لیکن بخار 100 سے زیادہ ہو، سینے پر دباؤ، سانس لینے میں دشواری اور گھٹن پر مریض فوری ڈاکٹرسے رجوع کرے آکسیجن لیول 93 فیصد سے کم ہو جائے تو مریض کو فوری کورونا علاج والے ہسپتال منتقل کیا جائے

اپنا تبصرہ بھیجیں